خبر و نظر

وطن کی محبت ہمارے دلوں سے کبھی جدا نہیں ہوسکتی ہے : اصغر علی امام مہدی


پلوامہ میں شہید جوانوں کو توحید ایجوکیشنل ٹرسٹ کی جانب سے خراج عقیدت
کشن گنج ( محمد شاہ نواز ندوی ) پلوامہ کے دہشت گردانہ حملہ میں شہید جوانوں کو خراج عقیدت و تحسین پیش کرتے ہوئے آج توحید ایجوکیشنل ٹرسٹ ،کشن گنج میں ایک تعزیتی نشست منعقد کی گئی جس میں توحید ایجوکیشنل ٹرسٹ کے چیرمین مطیع الرحمن بن عبد المتین ، مرکزی جمعیت اہل حدیث کے امیر مولانا اصغر علی امام مہدی ،صوبائی امیر بہار مولانا محمد علی مدنی ،حج کمیٹی بہارکے نو منتخب شدہ رکن زاہد الرحمن ، آر جے ڈی لیڈر عثمان غنی ، وارڈ پارشد محمد کلیم الدین وغیرہ سمیت توحید ایجوکیشنل ٹرسٹ کے سبھی اداروں کے ذمہ داران ، اساتذہ اور طلبہ و طالبات نے نم آنکھوں کے ساتھ گہرے رنج و الم کا اظہار کرتے ہوئے پلوامہ کے شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کیا ۔ ٹرسٹ کے سبھی اداروں کے طلبہ اور طالبات نے اپنے ہاتھوں میں تعزیتی تختیاں لئے پلوامہ میں شہید جوانوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے دہشت گردی کی مذمت کی۔ اس تعزیتی نشست کو خطاب کرتے ہوئے مرکزی جمعیت اہل حدیث کے امیر مولانا اصغر علی امام مہدی نے کہا کہ پلوامہ میں جس طرح سے دہشت گردانہ حملہ ہوا ہے اس کی کما حقہ مذمت کرنے کے لئے میرے پاس الفاظ نہیں ہے ، یعنی مذمت اپنی انتہاء کو پہونچ گئی ہے۔ انہوں نے حیرت و استعجاب کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پلوامہ جیسے علاقہ میں جہاں کہ پرندہ بھی پر نہیں مارسکتا ہے وہاں کثیر مقدار میں بارودی اسلحہ کے ساتھ حملہ ہوجانا انتہائی حیرت کی بات ہے ، ایسے موقع پر ہم دہشت گرد مرداباد کا نعرہ لگاتے ہیں ۔ دہشت گردی کی مذمت کرتے ہیں ، اور اپنے شہید جوانوں کو سچی خراج عقیدت پیش کرتے ہیں ، انہوں نے کہا ہم چاہے دنیا کے کسی خطہ میں سفر کریں لیکن ہمارا دل ہمیشہ ہندوستان کی محبت سے لبریز رہتا ہے ، ہمارے دلوں سے وطن کی محبت کبھی جدا نہیں ہوسکتی ہے ۔ نشست کو خطاب کرتے ہوئے توحید ایجوکیشنل ٹرسٹ کے چیرمین مطیع الرحمن عبد المتین نے کہا کہ جمو کشمیر کے پلوامہ میں ہندوستانی سی آر پی ایف جوانوں پر انتہائی بزدلانہ اور غیر انسانی حملہ ہوا ہے ۔ جس سے ہندوستان کا ہر فرد غم زدہ ہے۔ اس خود کش حملہ سےملک ہندوستان کو سخت تکلیف پہونچائی گئی ہے ۔ ہندوستان کی عزت و وقار کو چھلنی کر دیا گیا ہے ، جس کا انتقام لینا وقت کی سب سے اہم ضرورت ہے ۔ اس حملہ کی جتنی بھی مذمت کی جائے وہ کم ہے۔ان کا غم پورے ملک کا غم ہے ، ان کی آہ و بکا ہندوستان کے خطہ خطہ کی آہ و بکا ہے۔ ایسے موقع پر توحید ایجوکیشنل ٹرسٹ اپنے تعلیمی اداروں شہید جوانوں کے بچوں اور بچیوںکو مفت تعلیم میں دلانے کے لئے تیار ہے ۔وہیں سماجی کارکن عثمان غنی نے کہا کہ پلوامہ دہشت گردانہ حملہ کے ذمہ دار جیش محمد کےسرغنہ ہیں ، صرف نام مسلمان جیسا ہو اور کام مسلمانوں کا نہ ہو تو وہ مسلمان نہیں ہے ۔ ہم ان دہشت گردوں کو مسلمان نہيں مانتے ہیں ، کیونکہ اسلام دہشت گردی کی مخالفت کرتا ہے ، لہذا ہم اس حملہ کی مذمت کرتے ہیں ، وہیں کلیم الدین نے کہا کہ ہم ہندوستان کے باشندہ ہیں ہم اس کی حفاظت کے لئے تن من دھن کی قربانی دینے کے لئے تیار ہیں ۔ ہم پلوامہ میں شہید جوانوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں اور اس حملہ کی سخت مذت کرتے ہیں ، وہیں زاہد الرحمن نے کہا کہ قاتل کو معاف کرنا بھی جرم ہے ، اس لئے جلد از جلد دہشت گردانہ حملہ کا انتقام لیا جائے ، اس کے لئے ہم حکومت کے ساتھ ہیں ۔ انہوں نے ٹرسٹ کے چیرمین کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ مولانا مطیع الرحمن صاحب ہمیشہ وطن کی محبت میں قومی یکجہتی کے لئے پیش پیش رہتے ہیں ، اور آج بھی شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے بڑھ چڑھ کر حصہ لئے ہیں ۔ ہم ان کے جذبات کو سلام کرتے ہیں ۔ پرنسپل مفیض الدین کے کلمہ تشکر کے ساتھ تعزیتی نشست کا اختتام ہوا ۔ اس تعزیتی نشست میں سماجی کارکن عثمان غنی ، کلیم الدین ،زاہد الرحمن ،مزمل الحق مدنی، رہبر اسلام، ڈاکٹر منصور مدنی، مفیض الدین مدنی، مظہر مدنی، عبد الرشید ، شاہ نواز ندوی،نہال اختر سمیت درجنوں قد آور لوگ شامل تھے ۔

Comment here